لاہور:  پاکستان ٹیم کے اوپننگ میں ناکام تجربات کا سلسلہ جاری ہے۔امام الحق اور فخرزمان کی جوڑی بھی توقعات پر پورا نہ اترسکی، چیف سلیکٹر انضمام الحق کے بھتیجے نے گزشتہ 9اننگز میں 16کی اوسط سے 144رنز بنائے ہیں، جارح مزاج اوپنر نے جنوبی افریقہ کیخلاف دونوں ٹیسٹ میچز میں 32رنز جوڑے،  چھٹی پوزیشن پر وہ صرف7رنز تک محدود رہے، غیر ایشیائی کنڈیشنز میں یاسرشاہ کی کارکردگی بھی ناقص رہی۔تفصیلات کے مطابق ہیڈ کوچ مکی آرتھر کے چارج سنبھالنے کے بعد پاکستان ایک درجن سے زائد اوپننگ جوڑیاں آزما چکا اور ناکام تجربات کا سلسلہ ابھی تک جاری ہے،دورئہ جنوبی افریقہ میں امام الحق اور فخرزمان کی جوڑی بھی توقعات پر پورا نہ اترسکی، چیف سلیکٹر انضمام الحق کے بھتیجے نے گزشتہ 9اننگز میں 16کی اوسط سے 144رنز بنائے ہیں،ان میں ایک ففٹی شامل ہے،اس دوران اوپنر صرف 3 بار ڈبل فیگر میں داخل ہوسکے۔دوسری جانب یواے ای میں کینگروز کیخلاف ٹیسٹ ڈیبیو پر اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے فخرزمان  نے جنوبی افریقہ کیخلاف دونوں ٹیسٹ میچز میں مجموعی طور پر 32رنز جوڑے، مسلسل 3اننگز میں ناکامی کے بعد گزشتہ روز شان مسعود کو اوپنر بھیج کر انھیں چھٹی پوزیشن پر آزمایا گیا لیکن صرف 7رنز تک محدود رہے،غیر ایشیائی کنڈیشنز میں یاسرشاہ کی کارکردگی بھی ناقص رہی، لیگ اسپنرنے جنوبی افریقہ، انگلینڈ، نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا میں 10ٹیسٹ میچز میں 60کے قریب اوسط سے 28وکٹیں حاصل کی ہیں، ان میں سے 10صرف لارڈز میں تھیں،دیگر9میچز میں وہ صرف 18شکار کرپائے ہیں۔