36

سندھ حکومت کورونا پر سیاست کر رہی ہے، عوام کی جان بچانے سے کوئی دلچسپی نہیں ہے: پاسبان

کراچی (     ) پاسبان ڈیموکریٹک پارٹی کے چیف آرگنائزر اقبال ہاشمی نے کہا ہے کہ سندھ حکومت کورونا پر صرف سیاست کر رہی ہے، اسے حقیقتا عوام کی جان بچانے سے کوئی دلچسپی نہیں ہے۔وفاقی وصوبائی حکومتیں آپس میں لڑنے کے بجائے کورونا سے لڑنے کے لئے تمام ممکنہ اقدامات کریں۔جب اس وبا کے عروج کا وقت آیا تو سندھ حکومت نے وفاق کی بات پر عمل درآمد کرتے ہوئے لاک ڈاؤن نرم کر دیا تاکہ بعد میں وفاقی حکومت کو مورد الزام ٹھہرایا جا سکے۔وزیر صحت ڈاکٹر عذرا پیچوہو کا یہ بیان کہ عوام اب مکھیوں کی طرح کورونا وائرس سے مریں گے،سندھ کے عوام کی توہین ہے۔کراچی میں وینٹی لیٹرز صرف نجی ہسپتالوں میں دستیاب ہیں جو کہ ایک دن کے ایک سے ڈیڑھ لاکھ روپے وصول کر رہے ہیں۔سندھ حکومت نے اربوں روپے کورونا کی مد میں خرچ کئے ہیں تو وینٹی لیٹرز آخرکیوں دستیاب نہیں ہیں؟انتظامیہ اور پولیس عوام اور تاجروں سے مال بٹورنے میں مصروف ہے۔ پاسبان پریس انفارمیشن سیل سے جاری کردہ بیان میں پاسبان کے چیف آرگنائزراقبال ہاشمی نے مزید کہا کہ سندھ حکومت نے کورونا پر بیانات زیادہ دیئے ہیں کام کچھ نہیں کیا۔ کورونا سے اہلیان کراچی کو ہی نہیں بلکہ سندھ کے دیگر شہروں اور دیہاتوں کے لوگوں کی زندگیوں کو خطرات لاحق ہیں۔سندھ حکومت بتائے کہ عوام کے بچاؤ اور علاج معالجے کے لئے کیا اقدامات کئے گئے ہیں؟ عوام کے ساتھ پولیس کا رویہ سونے پر سہاگہ ہے۔پولیس لاک ڈاون کے نام پر موٹر سائیکلوں سے ہوا نکال رہی ہے اور لوگوں کی بے عزتی کر رہی ہے۔ڈبل سواری، ایس اوپیز پر عمل درآمد اور ماسک نہ پہننے پر کئے جانے والے جرمانے دراصل پولیس کی بھتہ اور رشوت وصولی کے لئے کھلا اجازت نامہ ہیں۔ کورونا وباکی وجہ سے پیدا ہونے والی یہ بدترین صورتحال ہے کہ لوگ سرکاری ہسپتالوں میں جانے سے بھی خوفزدہ ہیں۔حیدرآباد،ہالا،میرپور خاص،بے نظیر آباد،ٹھٹہ،بدین،لاڑکانہ،سجاول،دادو،سکھر و دیگر شہروں میں کتنے سرکاری و پرائیویٹ اسپتالوں میں کورونا کے ٹیسٹ کی سہولیات اور وینٹی لیٹرز دستیاب ہیں اور اب تک کورونا کے نام پر کتنی رقم خرچ کی گئی ہے، اس کی تفصیلات سے سندھ کے عوام کو آگاہ کیا جائے۔وزیر صحت سندھ نے 5جون کو ہونے والے اجلاس میں وفاق پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ وفاق چاہتا ہے کہ کورونا سے لاکھوں کی تعداد میں لوگ مریں جبکہ وفاق کا کہنا ہے کہ سندھ حکومت کے کورونا سے نبر د آزما ہونے کے لئے کئے جانے والے اقدامات ناکافی ہیں۔ اس نورا کشتی میں نقصان سراسر عوام کا ہو رہا ہے۔ امدادی رقومات خرد برد کی جارہی ہیں، حفاظتی طبی امداد اسمگل ہونے کی خبریں بھی سماعت کا حصہ بن رہی ہیں۔ سندھ حکومت الزام تراشی کا سلسلہ ترک کر کے کورونا  اور علاج کی سہولیات کے حوالے سے کئے گئے مکمل اقدامات اور ا عداد و شمار عوام کے سامنے پیش کرے اور میڈیا بھی اس کا نوٹس لے۔وفاق پر الزامات کی سیاست کرنے کے بجائے اٹھارہویں ترمیم کے بعد صوبوں کو ملنے و الے لا محدود اختیارات اور فنڈز کا حساب عوام کو دیا جائے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں