18

ہمیں اپوزیشن کی بڑی جماعتوں سے تحفظات ہیں، مولانا فضل الرحمان

اسلام آباد: جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ اپوزیشن کی بڑی جماعتوں سے ہمارے تحفظات ہیں۔اسلام آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ لاہور میں آج پیش آنے والے واقعات قابل مذمت ہے، اگر بلٹ پروف گاڑی نہ ہوتی تو نہ جانے کیا ہوتا، مریم نواز کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہیں، نیب کا رویہ کسی بھی سیاسی جماعت کے ساتھ مناسب نہیں، نیب دفتر پر حملے کا جھوٹ بولا جا رہا ہے، نیب پر حملے کی بات سمجھ سے بالاتر ہے کیونکہ نیب دفتر اور (ن) لیگی کارکنوں میں فاصلہ تھا، نیب اب بہانے بنارہا ہے ہم نے صرف مریم نواز کو بلایا تھا، رہنما پیش ہوں تو کارکن اکٹھے ہو جاتے ہیں، ہم نیب کی جانب سے کیے جانے والے عذر کو نہیں مانتے۔سربراہ جے یو آئی (ف ) کا کہنا تھا کہ نیب احتساب کے لیے نہیں انتقام کے لیے بنایا گیا ادارہ ہے، حکومت سیاسی مخالفین کے خلاف نیب کو استعمال کررہی ہے، روز کی ذلت سے بہتر ہے کہ ایک پالیسی بنائی جائے کہ نیب میں پیش نہ ہوں۔مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ انہیں اپوزیشن جماعتوں کے کردار پر تحفظات ہیں، اپوزیشن کو متحد ہونے کی اشد ضرورت ہے، اپوزیشن کی بڑی جماعتوں کا کردار واضح ہونا چاہیے،جب تک اپوزیشن یکسو نہیں ہوگی، ہم اس ناجائز حکومت کے خلاف موثر کردار ادا نہیں کر سکتے۔ اس حکومت کو برے انجام تک پہنچانے کے لیے اللہ کی طرف سے ڈھیل ہوسکتی ہے۔صحافی کی جانب سے سوال پوچھا گیا کہ کیا آپ نواز شریف کی پالیسی کے ساتھ ہیں یا شہباز شریف کی؟ جس پر مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ یہ سوال ان سے پوچھنا چاہیے کہ وہ مولانا فضل الرحمان کی پالیسی کے ساتھ ہیں یا نہیں؟۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں