14

امریکی انتخاب:بائیڈن کی برتری، ٹرمپ کا گنتی رکوانے کیلیے عدالت جانے کا اعلان

واشنگٹن: اہم ریاستوں مشیگن اور وسکونسن میں برتری کے بعد ڈیموکریٹ امیدوار جو بائیڈن  صدارتی دوڑ میں اپنے حریف صدر ٹرمپ سے آگے نکل گئے ہیں تاہم صدر کی کمپین ٹیم نے تین ریاستوں میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی اور انتخابی نتائج رکوانے کے لیے عدالت سے رجوع کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق  ریاست وسکونسن کے 10الیکٹورل ووٹ جیتنے کے بعد جو بائیڈن کے الیکٹورل ووٹوں کی تعداد 248 ہوچکی ہے اور انہیں 16 الیکٹورل ووٹ والی ریاست مشیگن میں بھی معمولی برتری حاصل ہے جبکہ  اب تک کے نتائج کے مطابق صدر ٹرمپ 214 الیکٹورل ووٹ کے ساتھ پاپولر ووٹ میں بھی مدمقابل بائیڈن سے پیچھے ہوگئے ہیں۔دوسری جانب صدر ٹرمپ کی انتخابی مہم کے مینیجر نے اعلان کیا ہے کہ وسکونس میں مبینہ بے ضابطگیوں کے باعث صدر ٹرمپ وہاں دوبار گنتی کی باضابطہ درخواست دائر کریں گے جب کہ  کمپین ٹیم نے ریاست مشیگین میں ووٹوں کی گنتی رکوانے کے لیے عدالت سے رجوع کرلیا ہے۔ علاوہ ایزں ٹرمپ کی ٹیم کی جانب سے پنسلوینیا میں بھی گنتی رکوانے کے لیے عدالت جانے کا اعلان کردیا گیا ہے۔وسکونسن میں برتری کے بعد بائیڈن کے وائٹ ہاؤس تک پہنچنے کے امکانات بڑھے ضرور ہیں تاہم  کانٹے دار مقابلہ جاری ہیں اور مزید  فیصلہ کُن ریاستوں کے نتائج سے صورت حال تبدیل ہوسکتی ہے۔ علاوہ ازیں بدھ کی صبح دونوں امیدواروں کے اعلیٰ مشیروں نے اپنے اپنے بیانات میں انتخابی کام یابی اور برتری کے دعوے بھی کیے ہیں۔مختلف اداروں کی جانب سے جاری کردہ غیر حتمی  کے مطابق دونوں امیدواروں کے درمیان جاری اس مقابلے میں پنسلوینیا، وسکونسن اور مشیگین کی ریاستوں کے نتائج فیصلہ کُن قرار دیا جارہا ہے جب کہ  اور ایریزونا،  جارجیا اور نواڈا، نارتھ کیرولینا میں ووٹوں کی گنتی جاری ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں