8

افغانستان میں مسلح افراد کی فائرنگ سے 3 خاتون پولیو اہلکار جاں بحق

کابل: افغانستان کے صوبے ننگرہار میں دو الگ الگ واقعات میں خاتون پولیو ورکرز پر حملہ آوروں نے اندھا دھند فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں 3 پولیو اہلکار جاں بحق ہوگئیں۔افغان میڈیا کے مطابق ملک بھر میں پولیو مہم جاری ہے جس کے دوران دو مختلف واقعات میں نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ سے 3 خاتون پولیو اہلکار جاں بحق ہوگئیں۔فائرنگ کا پہلا واقعہ جلال آباد کے ضلع مجبورآباد میں پیش آیا جہاں موٹر سائیکل سوار مسلح افراد نے بچوں کو گھر گھر پولیو کے قطرے پلانے والی خاتون ورکر کو فائرنگ کر کے قتل کردیا۔ پہلے واقعے کے محض 1 گھنٹے بعد جلال آباد کے ہی علاقے لال قاسم آغا میں بھی نامعلوم مسلح افراد نے دو خاتون پولیو ورکز کو گولیاں مار ہلاک کردیا۔ہلاک ہونے والے خواتین کی شناخت بصیرہ، ثمینہ اور نگینہ کے نام سے ہوئی ہے۔ تاحال کسی گروپ نے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔ ان خواتین پولیو ورکرز کو سیکیورٹی فراہم نہیں کی گئی تھی۔واضح رہے کہ افغانستان پولیو زدہ ممالک میں پہلے نمبر پر براجمان ہے جہاں رواں برس 23 نئے پولیو کیسز سامنے آئے جب کہ گزشتہ ایک برس کے دوران 310 بچوں میں پولیو کی تصدیق ہوئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں