رحیم یار خان(جاوید اقبال)تھانہ رکن پور کی حدود مسن آباد، غوث پور ماچھیاں اور آہیراں میں آئے مرغوں کی لڑائی کرائی جارہی ہے دور دور کے علاقوں سے آکر ککڑ باز اور جواری مرغوں کی لڑائی پر جوا کرنے لگے ہیں مرغوں کی لڑائی پر روزانہ لاکھوں روپے کا جوا ہونے لگا مرغوں کی خونی لڑائی میں کئی مرغے بری طرح زخمی ہوکر میدان میں ہی تڑپ تڑپ کر مرنے لگے ہیں ظالم جواریوں کی جانب سے مرغوں پر “چھری پھیر” شرط بھی کھیلی جارہی ہے کہ جس کے تحت ہارنے کے باوجود زندہ رہ جانے والے مرغے کی گردن ظالمانہ اور وحشیانہ انداز سے چھری سے اڑا کر اسے آوارہ کتوں اور جنگلی جانوروں کے کھانے کے لیے چھوڑ دیا جاتا ہے گزشتہ روز بھی مسن آباد میں مرغوں کی خونی لڑائی کروائی گئی جس کی اطلاع اہلیان علاقہ نے پولیس تھانہ رکن پور کو دی لیکن بار بار کی اطلاع اور سوشل میڈیا پر مرغوں کی لڑائی کی ویڈیو وائرل ہونے کے باوجود بھی پولیس چار گھنٹے بعد پہنچی اور کوئی گرفتاری کیے بغیر ہی واپد چلی گئی اہلیان علاقہ نے ڈی پی او رحیم یارخان سے نوٹس لیتے ہوئے مرغوں کی خونی لڑائی اور اس پر جوا کرانے والوں کے خلاف سخت کاروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے_