72

مسلم لیگ(ن) کے وزیراعظم کے امیدوار کو ووٹ دیں گے، بلاول بھٹو زرداری

اسلام آباد: پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ان کی جماعت وفاقی حکومت میں عہدے لینے میں دلچسپی نہیں رکھتی اور خود کو وزیراعظم کی دوڑ میں شامل نہیں کرتا۔زرداری ہاؤس اسلام آباد میں پی پی پی کی سینٹرل ایگزیکٹیو کمیٹی (سی ای سی) کے اجلاس میڈیا بریفنگ میں چیئرمین پی پی پی بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ حکومت میں عہدے لینے میں دلچسپی نہیں رکھتے ہیں اور خود کو وزیراعظم کی دوڑ میں شامل نہیں کرتا، پی پی پی کا وزیراعظم نہیں ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان پیپلز پارٹی کا اصولی فیصلہ ہے، پاکستان کو مستحکم کریں، پی پی پی کے پاس وفاقی حکومت بنانے کا مینڈیٹ نہیں ہے، پیپلز پارٹی اور پی ٹی آئی کے درمیان مذاکرات نہیں ہو رہے ہیں۔بلاول نے کہا کہ ہم اس وقت سیاسی اور معاشی بحران کا شکار ہیں، ملک میں سیاسی استحکام قائم کرنے کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دیں گے، جو دوسری سیاسی جماعتوں سے رابطے کرے گی۔چیئرمین پی پی پی نے کہا کہ کسی جماعت کے پاس مینڈیٹ واضح نہیں ہے، مسلم لیگ (ن) یا پی پی پی اکیلے حکومت نہیں بنا سکتے، اگر دوبارہ الیکشن ہوتے ہیں تو کوئی سیاسی جماعت نتائج قبول نہیں کرے گی۔ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی آج بھی سیاسی فیصلے نہیں کررہی، پاکستان کی عوام پیپلز پارٹی کی طرف دیکھتی ہے، آئینی عہدے لینے کا ہمارا حق یے، صدر، چیئرمین سینٹ اور اسپیکر کے لیے پیپلر پارٹی اپنے امیدوار کھڑے کرے گی۔بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ آصف زرداری میرے والد ہیں اور میری خواہش ہے کہ وہ صدر بنیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں