ساہیوال: ساہیوال میں کاؤنٹرٹیررازم ڈیپارٹمنٹ کے مبینہ مقابلے میں جاں بحق ہونے والوں کی ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ جاری کردی گئی جب کہ واقعے کی تحققیات کے لیے پنجاب حکومت کی جانب سے جے آئی ٹی تشکیل دی گئی ہے۔ ساہیوال کے علاقے قادرآباد کے قریب پنجاب پولیس کے محکمہ انسداد دہشت گردی (سی ٹی ڈی) کی  کارروائی سے جاں بحق ہونے والے 4 افراد کی ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ جاری کردی گئی جس کے مطابق 13 سالہ بچی اریبہ کلو 6 گولیاں لگی، کار ڈرائیور ذیشان کو 10 گولیاں ماری گئی، زخمی بچوں کی والدہ نبیلہ بی بی کو 4 گولیاں ماری گئی اور خلیل کو 13 گولیاں لگی۔دوسری جانب سی ٹی ڈی کی کارروائی میں زخمی ہونے والے بچوں کو لاہور منتقل کر دیا گیا جہاں انہیں جنرل ہسپتال طبی امداد دی جارہی ہے، عمیر،منیبہ اور ہودیہ کو سرکاری ایمبولینس میں لایا گیا۔ زخمی عمیر کو سیدھی ٹانگ میں گولی لگی تھی، منیبہ کا ہاتھ گاڑی کا شیشہ ٹوٹنے کی وجہ سے زخمی ہوا تھا۔گزشتہ روز ساہیوال میں ٹول پلازہ کے نزدیک سی ٹی ڈی کے مبینہ مقابلے میں 4 افراد جاں بحق اور 3 بچے زخمی ہوگئے تھے۔ جاں بحق افراد میں ایک خاتون نبیلہ، ان کا شوہر محمد خلیل اور ان کی 13 سالہ چھوٹی بیٹی اریبہ شامل ہے جب کہ بیٹا اور 2 بیٹیاں بھی زخمی ہوئی ہیں۔ جاں بحق افراد میں چوتھا شخص ذیشان ان کا ہمسایہ تھا۔ یہ پورا خاندان لاہور کا رہائشی تھا جو شادی کی تقریب میں شرکت کے لیے بورے والا جارہا تھا۔