اسلام آباد (عباس ملک سے ) ملک بھر میں آج یوم یکجہتی کشمیر بھرپور طریقے سے منایا جائے گا جب کہ اس موقع پر کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے ریلیاں، جلسے اور تقریبات منعقد کی جائیں گی۔مقبوضہ کشمیرمیں دہائیوں سے جاری حق خودارادیت کی تحریک کچلنے کی تمام بھارتی کوششیں ناکام رہیں، ہزاروں کشمیری شہید ہوچکے ہیں، دہائیوں سے یہی داستان ہے مقبوضہ وادی کی جہاں ہردن کا آغازایک نئی امید اوراختتام کسی نہ کسی گھر میں بچھی صف ماتم پرہوتا ہے۔بات کریں اعدادوشمارکی تو کشمیر میڈیا سروس کے مطابق 1989 سے لے کر اب تک بھارتی فوج نے ظلم وستم کی تمام حدیں عبور کرتے ہوئے 95 ہزار سے زائد کشمیریوں کوشہید کردیا۔انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا بدترین عملی مظاہرہ دیکھنا ہو تو مقبوضہ کشمیر پر ایک نظر ڈال لیجئے جہاں دوران حراست شہید کئے گئے کشمیریوں کی تعداد 7ہزار سے تجاوز کرچکی ہے جب کہ ایک لاکھ 45 ہزارکشمیریوں کو گرفتار کیا گیا جن کا قصور صرف آزادی کا مطالبہ تھا۔مقبوضہ وادی کو بھارت کے غیرقانونی قبضے سے چھڑوانے کی جدوجہد میں تقریباً 23 ہزار کشمیری خواتین بیوہ ہوگئیں، 11ہزار کو زیادتی کا نشانہ بنایا گیا جب کہ ایک لاکھ 7 ہزار سے زائد بچے یتیم ہوگئے۔2018 وادی میں بھارتی مظالم کی شدت کے لحاظ سے گزشتہ 10 سال میں بدترین سال رہا، بھارتی افواج نے نام نہاد سرچ آپریشنز سمیت مختلف واقعات میں 375 کشمیریوں کوشہید کردیا۔ایک طرف غیر انسانی ظلم و جبر تو دوسری طرف بھارتی سرکار کی ہٹ دھرمی اور بے حسی اس کے لئے باعث ذلت بن گئی ہے، اتوارکو بھارتی وزیراعظم مودی کشمیر کے دورے پر آئے تو کشمیریوں نے پہیہ جام ہڑتال سے ان کا استقبال کیا لیکن بجائے ندامت کے مودی سری نگر کی جھیل کی سیر کو نکلے اور کیمروں کو دیکھ کر ہاتھ ہلاتے رہے۔دوسری طرف حکومت اور پاکستان کی غیور عوام بھارتی مظالم کے خلاف ہمیشہ کشمیریوں کے ساتھ کھڑی رہی یہی وجہ ہے کہ مقبوضہ وادی میں پاکستان زندہ باد کے نعرے لگائے جاتے ہیں اور ہرروز وہاں سبز ہلالی پرچم لہرائے جاتے ہیں۔ پاکستان میں 5 فروری کو یوم یکجہتی کشمیر منایا جاتا ہے اس حوالے سے آج ملک بھر میں ریلیاں جلسے اور تقریبات منعقد ہوں گی۔